پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کے دوران شدید مندی

کراچی (ملتان ٹی وی ایچ ڈی۔ 29 اکتوبر2020ء) پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کے دوران شدید مندی دیکھنے میں آئی ہے اور 1900 سے زائد پوائنٹس کی کمی ہوئی ہے۔کاروباری ہفتے کے چوتھے روز جب مارکیٹ کھلی تو انڈیکس 41 ہزار 186 پر تھا۔کاروباری سرگرمیاں نہ ہونے کے باعث آغاز کے ساتھ ہی مارکیٹ میں شدید منفی دیکھی گئی ہے۔مارکیٹ میں خریدار نہ ہونے کی وجہ سے پہلے ایک گھنٹے میں 600 سے زائد پوائنٹس کی کمی ہوئی۔
بتایا گیا ہے کہ پی ایس ایکس 100 انڈیکس کاروبار کے دوران 1900 پوائنٹس سے زیادہ نیچے آ گیا۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں مسلسل دوسرے روز بدھ کو بھی مندی کا رجحان غالب رہاجس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس194.97پوائنٹس کی کمی سے 41186.86پوائنٹس کی سطح پرآ گیااور 59.27فی صد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میںکمی ریکارڈکی گئی جس کے سبب سرمایہ کاروںکو36ارب6کروڑ48لاکھ روپے کا نقصان اٹھانا پڑاجب کہ حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم منگل کی نسبت23.41فیصدکم رہا۔
پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گزشتہ روز ٹریڈنگ کے آغازمثبت زون میں ہوا اور سرمایہ کاروں کی جانب سے مخصوص منافع بخش کمپنیوں کے شیئرز کی خریداری میں دلچسپی کے باعث تیزی رہی جس کے باعث ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100انڈیکس41695 پوائنٹس کی بلند سطح پر پہنچ گیاتاہم بعد ازاں حصص فروخت کا رجحان بڑھ گیا جس کے سبب مندی چھاگئی جو آخر تک برقرار رہی اورکاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 194.97پوائنٹس کی کمی سی41186.86پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا جب کہ کے ایس ای30انڈیکس 80.48ائنٹس کی کمی سے 17297.09پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئر انڈیکس 137.33پوائنٹس کی کمی سے 28976.13پوائنٹس پربند ہوا۔
گزشتہ روز مجموعی طور پر415کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سی151کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 246میں کمی اور18کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔مندی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے کا مجموعی حجم76کھرب45ارب33کروڑ90لاکھ روپے سے گھٹ کر76کھرب9ارب27کروڑ42لاکھ روپے ہوگیا۔قیمتوں میں اتار چڑھاوکے اعتبار سے وائتھ پاک کے حصص کی قیمت35روپے کے اضافے سے 950روپے اورمچلز فروٹ32.93روپے کے اضافے سے 472.06روپے ہوگئی جب کہ انڈس موٹر کے حصص کی قیمت39.21روپے کی کمی سی1206.95روپے اورسیپ ہائر ٹیکس35.89روپے کی کمی سی780.12روپے ہوگئی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *