انگلینڈ کی ایک اورکائونٹی نسل پرستی مسلمان کرکٹرمتاثرہوگیا

2005ء میں ایک مخالف کھلاڑی نے کہا ’شٹ اپ یو پی..، تم ایسی بات کیوں کررہے ہو؟ کیا آپکو جانے کیلئے اپنی کونے کی دکان نہیں ملی‘؟:محسن عارف

لندن (ملتان ٹی وی ایچ ڈی ۔ 30 ستمبر 2020ء ) گلیمورگن سیکنڈ الیون کے سابق کھلاڑی محسن عارف نے خصوصی انٹرویو کے دوران اپنے دور میں نسل پرستی کا شکار ہونے کا انکشاف کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ بھی بدترین وقت سے گزرے ہیں۔ عارف نے کائونٹی پر ادارہ جاتی نسل پرستی کا بھی الزام عائد کیا ہے۔ عارف کا ٹیلی گراف کو یہ انٹرویو یارکشائر کے آف سپنر عظیم رفیق کے بیان کردہ جذبات کا تسلسل بھی ہے جو انہوں نے ایک ماہ قبل لگائے تھے ۔

36 سالہ عارف حسین نے بتایا کہ انہیں 2005ء میں دوران کھیل نسل پرستانہ زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ، عارف کے مطابق ایک مخالف کھلاڑی جس کا اس وقت گلیمورگن سے معاہدہ تھا ،نے عارف پربرستے ہوئے کہا تھا کہ ’شٹ اپ یو پی۔۔۔۔ تم ایسی بات کیوں کر رہے ہو؟ کیا آپ کو جانے کے لئے اپنی کونے کی دکان نہیں ملی؟ ‘۔ عارف نے اس وقت واقعہ کی اطلاع گلیمورگن کو نہیں دی تھی ۔ عارف نے یہ بھی الزام لگایا کہ کاؤنٹی میں ادارہ جاتی نسل پرستی کا مظاہرہ کیا گیا ، ایشیائی نژاد کھلاڑی کے لئے یقینی طور پرکوئی مدد نہیں تھی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *