سال 19-2018 کی دوران ملک میں بیروزگاری میں اضافہ ہوا، سروے

(ملتان ٹی وی ایچ ڈی 18ستمبر2021) مالی سال 2019 میں نوکریاں تلاش کرنے والوں کی تعداد میں 9 لاکھ 20 ہزار افراد کا اضافہ ہوا اور یہ تعداد اس سے گزشتہ سال 37 لاکھ 90 ہزار کے مقابلے میں بڑھ کر 47 لاکھ 10 ہزار ہوگئی یعنی اس عرصے میں ملک کی مجموعی افرادی قوت 6 کروڑ 55 لاکھ سے بڑھ کر 6 کروڑ 87 لاکھ 30 ہزار ہوگئی۔
اس کا ایک مطلب یہ بھی ہے کہ 30 لاکھ 23 ہزار افراد نوکری کی تلاش میں مارکیٹ میں اس وقت داخل ہوئے جب قومی معیشت کی نئی نوکریاں پیدا کرنے کی صلاحیت سکڑنا شروع ہوگئی تھی اور ابھرتے ہوئے معاشی عدم توازن کی وجہ سے کاروباری اداروں نے اپنے ملازمین کو نوکریوں سے نکالنا شروع کردیا۔
بے روزگاری کی بڑھتی ہوئی شرح نے مرد و خواتین دونوں ہی کو متاثر کیا، مرد حضرات میں بے روزگاری کی شرح 5.1 فیصد سے بڑھ کر 5.9 فیصد ہوگئی جبکہ خواتین میں بے روزگاری کی شرح 8.3 فیصد سے بڑھ کر 10 فیصد ہوگئی۔
یہ بھی پڑھیں: ‘ملک میں تاریخی بیروزگاری اور غربت ہے، حکومت 3 سالہ تباہی کا جشن منا رہی ہے’
سروے کے اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ شہری علاقوں میں بے روزگاری کی شرح 7.9 فیصد تک بڑھی ہے جو ایک سال قبل 7.2 فیصد تھی۔
تاہم بے روزگاری میں دیہی علاقوں میں زیادہ اضافہ دیکھا گیا جہاں یہ شرح 5 فیصد سے بڑھ کر 6.4 فیصد تک جاپہنچی، دیہی علاقوں میں خواتین میں بیروزگاری میں تیزی سے اضافہ ہوا اور زیر جائزہ عرصے میں 5.9 فیصد سے بڑھ کر 8.5 فیصد ہوگئی۔
اگر اس کا دیہی علاقوں میں مردوں کی بے روزگاری سے موازنہ کیا جائے تو وہ ان دو سالوں میں 5.5 فیصد اور 4.7 فیصد تھی۔
اس عرصے میں مزدوروں کی شراکت داری کی شرح 44.8 فیصد رہی یعنی ان کی مجموعی تعداد 6 کروڑ 87 لاکھ 73 ہزار ہے جس میں مرد و خواتین دونوں ہی شامل ہیں۔
ملک میں 15 کروڑ 35 لاکھ آبادی ملازمت کی عمر میں ہے جن میں 7 کروڑ 74 لاکھ مرد اور 7 کروڑ 61 لاکھ خواتین شامل ہیں، ملازمت کی عمر رکھنے والی 9 کروڑ 41 لاکھ افراد کی اکثریت دیہی علاقوں میں رہائش پذیر ہے جبکہ 5 کروڑ 93 لاکھ کا تعلق شہری علاقوں سے ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *